جج نے ذہنی معذور بچے کی خواہش پوری کردی

چھ سالہ بچہ احمد اپنے والد کے ساتھ کورٹ روم کو دیکھنے کے لیےعدالت میں آیا تو اس نے بچے نے جج کی کرسی پر بیٹھنے کی خواہش ظاہر کی۔

بچے کے والد نے عدالت میں کہا کہ میرا بچہ جج بننا چاہتا ہے جس پر ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج فرقان احمد نے جواب دیا کہ تو پھر آج آپ کے بچے کے جج بننے کی خواہش کو پورا کر دیتے ہیں۔

جج محمد فرقان احمد نے ذہنی معذور بچے کو اپنی جج کی کرسی پر بٹھا کر بچے کی خواہش کو پورا کردیا جب کہ فاضل جج نے ذہنی معذور بچے کو اپنی کرسی پر بٹھا کر کیس کی سماعت کی۔

ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نے ذہنی معذور بچے کے جج بننے کی خواہش پوری کردی۔