نیب کی جانب سے وال پینٹنگ کے مقابلہ کا انعقاد

لاہور(۱۸نومبر): لاہور میں آج لاہور کی پانچ معروف یونیورسٹیوں کے مابین ”بدعنوانی کے معاشرتی اثرات“ کے موضوع پر نیب لاہور بیورو کی بیرونی دیوار پہ وال پینٹنگ کے مقابلہ کا انعقاد کیا گیا۔ نیب لاہور کی جانب سے اپنی نوعیت کے پہلے وال پینٹنگ کے مقابلہ میں نیشنل کالج آف آرٹس (این سی اے)، پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف فیشن اینڈ ڈیزائننگ (پی آئی ایف ڈی)، پنجاب یونیورسٹی، پنجاب ہوم اکنامکس کالج اور یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب (یو سی پی) کی ٹیموں نے حصہ لیا۔ وال پینٹنگ مقابلوں میں ڈائریکٹر نیب لاہور نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی جبکہ ججز کے فرائض پانچوں یونیورسٹیوں کے نمائندگان کیجانب سے کئے گئے۔
نیب لاہور آگاہی و تدارک ونگ کیجانب سے معاشرتی بدعنوانی کے ملک و قوم پر اثراندا ز ہونیوالے عوامل اور انکے اثرات کے موضوع پر یونیورسٹیوں کے طلباء و طالبات نے کرپشن و بدعنوانی کے ناسور اور اسکے معاشرے پہ پڑتے اثرات کے خاتمے کیلئے پینٹنگز بنا کر شہریوں میں آگاہی مہم کا حصہ بنے۔طلباء نے کرپشن سے پاک معاشرے کیلئے نیب لاہور کی دیواروں کو اپنی تخلیقی پینٹنگز کیلئے استعمال کیا۔اس سے قبل طلباء کے مابین بدعنوانی کے موضوعات پہ ہونیوالے تقریری مقابلوں کیساتھ ساتھ پینٹنگ کے مقابلہ جات کے انعقاد کا بنیادی مقصد نئی نسل میں بدعنوانی کے خلاف شعور اجاگر کرنا ہے جسکا اظہار آج طلباء و طالبات کیجانب سے اپنی تخلیقی صلاحیتوں کا استعمال کرتے ہوئے بھرپور انداز میں کیا گیا ہے۔
پوری دنیا کی طرح پاکستان میں بھی 9دسمبر عالمی یوم انسداد بدعنوانی کے طور پہ منایا جاتا ہے جسکے لیے نیب لاہور آگاہی و تدارک ونگ طلباء و طالبات کے مابین تقریری مقابلوں، وال پینٹنگ و پوسٹرز اور مضمون نویسی کے مقابلوں کا اہتما م کرتا ہے جبکہ جیتنے والے طلباء کی حوصلہ افزائی کیلئے انہیں تعریفی اسناد اور کیش پرائزز بھی سے نوازا جاتا ہے۔ اس سال بھی بدعنوانی کے موضوع پہ تخلیق کئے گئے فن پاروں میں سے فاتح قرار دیئے جانیوالی پینٹنگز کی نیب لاہور باقاعدہ طورپر 9دسمبر کو منعقدہ نمائش میں آویزاں کرے گا۔