نیشنل کالج آف آرٹس کے زیر اہتمام ذہنی صحت سے متعلقہ آگاہی کے لئے سیشن کا انعقاد

لاہور(۱۹نومبر):نیشنل کالج آف آرٹس اور عبدالسمیع ٹرسٹ کلینک کے زیر اہتمام ذہنی صحت سے متعلقہ آگاہی کے لئے این سی اے شاکر علی آڈیٹوریم میں ایک معلوماتی سیمینار منعقد کیا گیا۔ جس میں کالج فیکلٹی، بدالسمیع ٹرسٹ کلینک کے عہدیداران اور طلبہ و طالبات کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ سیمینار کا آغاز ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی تیار کردہ ذہنی امراض سے متعلقہ معلوماتی ڈاکومنٹری فلم سے کیا گیا۔ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے سائیکاٹرسٹ ڈاکٹر علی اعواب نے کہا کہ پاکستان میں ذہنی صحت سے متعلق آگاہی بہت کم ہے۔ جس کی وجہ سے ذہنی بیماریوں کی بروقت تشخیص اور علاج میں مشکل پیش آتی ہے اور اس حوالے سے این سی اے کی جانب سے سیمینار کا انعقاد کیا جانا قابل ستائش ہے۔ انکا کہنا تھا کہ ڈپریشن ذہنی امراض میں سب سے زیادہ اور عام ہے۔ لیکن اسکا علاج بھی اتنا ہی آسان ہے۔ منفی سوچ یا خیالات کا آنا خطرناک نہیں ہے۔ لیکن ایسے خیالات کا مسلسل آنا اور وقت کے ساتھ بڑھتے چلے جانا خطرناک ہو سکتا ہے۔ ذہنی امراض سے متعلقہ انہوں نے بتایا کہ پسند کے کام سے دل گھبرانے لگے، روناآنا، نیند زیادہ آنا، نیند کا نہ آنا، چڑچڑا پن یہ تمام علامات ذہنی امراض کے آغاز کی ہیں۔لہذا ان تمام امراض کو بگڑنے سے پہلے ہی علاج کے دائرہ کار میں لے آنا چاہئے۔
اپنے لیکچر میں ڈاکٹر علی اعوا ب نے شرکاء سے نہایت مفید معلومات شیئر کیں اور اس بات کا اظہار بھی کیا کہ ذہنی امراض عام فہم اور قابل علاج بیماریاں ہیں۔ انہیں پاگل پن سے جوڑنا مناسب نہیں ہے۔
سیمینار کے اختتام پر ڈاکٹر علی اعواب نے طلبہ و طالبات کے سوالات کے جوابات بھی دیئے۔

لیکچرکے دوران حاضرین ہمہ تن گوش ہیں