یونیورسٹی آف اوکاڑہ کی اکیڈمک اسٹاف ایسوسی ایشن کی جانب سے یونیورسٹی کے خلاف پروپیگنڈا کی پُرزور مذمت

لاہور(۱۹نومبر): یونیورسٹی آف اوکاڑہ کی اکیڈمک اسٹاف ایسوسی ایشن کی جنرل باڈی نے بروز منگل ہونے والے ایک ہنگامی اجلاس میں گزشتہ ہفتے ایک سوشل میڈیا ویڈیو کی بنیاد پہ یونیورسٹی کے خلاف ہونے والے منفی پروپیگنڈا کی پُرزور مذمت کی ۔
تقریبا 200 اساتذہ کے اس اجلاس میں گزشتہ جمعے ہونے والے ناخشگوار واقعہ اور اس پہ سول سوسائٹی کے ردِ عمل پہ اظہارِ خیال کیا گیا اور یونیورسٹی انتظامیہ کو طلباء کی بدنظمی کی بنیاد پہ تنقید کا نشانہ بنانے پر تحفظات کا اظہار کیا گیا ۔ اے ایس اے نے اس معاملے کے دفاع میں انتظامیہ کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔
اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ایے ایس اے کے صدر ڈاکٹر حمود الرحمن کا کہنا تھا کہ چند طلباء کے انفرادی عمل کی بنیاد پہ ایک ادارے کو تنقید کا نشانہ نہیں بنانا چاہیے۔ یونیورسٹی آف اوکاڑہ اس خطے میں اعلی تعلیم عام کرنے کے لیے کوشاں ہے اور سول سوسائٹی کو اس بات کا نا صرف اعتراف کرنا چاہیے بلکہ اس کی حوصلہ افزائی بھی کرنی چاہیے۔
جمعے کے ناخوشگوار واقعہ کے بعد وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد زکریا ذاکر نے فی الفور ایک انکوائری کمیٹی تشکیل دی۔ کمیٹی نے راتوں رات واقعہ کی انکوائری کی اوراس میں ملوث چار طلباء کو یونیورسٹی سے خارج کر دیا۔ مستقبل میں اس طرح کی واقعات کی روک تھام کےلیے بھی ایک جامع حکمتِ عملی تیار کر لی گئی ہے۔