نیشنل کالج آف آرٹس کے پروگرام”آرٹسٹ ان ریزیڈنس“کے زیر اہتمام فن پارو ں کی نمائش

نیشنل کالج آف آرٹس آرٹ اور فنون لطیفہ کی تعلیم سے وابستہ پاکستان کا قدیم ترین تعلیمی ادارہ ہے۔ آرٹ کی تعلیم؎ حا صل کرنے کی خواہش مندطلبہ کا خواب ہوتا ہے کہ وہ یہاں پڑھ سکیں۔ دُنیا بھر کے آرٹسٹ بھی اسے نہایت معتبر ادارہ تسلیم کرتے ہیں۔ نیشنل کالج آف آرٹس، آرٹ کے فروغ کیلئے ”آرٹسٹ ان ریزیڈنس“کے نام سے ایک پروگرام چلارہا ہے۔ جس میں مختلف ممالک کے آرٹسٹ این سی اے آکر کچھ عرصہ قیام کرتے ہیں۔ایسے ہی ایک آرٹسٹ آدم رُبورٹ ہارٹ نیل((Adam Robert Hartnell کا تعلق انگلینڈ سے ہے۔ آدم روبورٹ کے فن پاروں کی نمائش کی افتتاحی تقریب منعقد کی گئی۔ جس میں پرنسپل این سی اے،کالج فیکلٹی اور طلبا وطالبات کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ این سی اے میں قیام اور اپنے کام کے حوالے سے مہمان آرٹسٹ کاکہنا تھا کہ اُنہیں این سی اے آکر بہت خوشی ہوئی ہے۔ یہاں اُنہیں بہت کچھ سیکھنے کو ملا۔ اس تین ماہ قیام کے دوران اُنہوں نے این سی اے میں ووڈ بلاک پرنٹنگ، سلک سکرین پرنٹنگ،ٹیکسٹائل کی دوسری تکنیکس(فنی عمل) سیکھیں۔انکا مزید کہنا تھا کہ انہوں نے این سی اے میں قیام کے دوران اپنے پچھلے موضوعات کو ہی آگے بڑھایا ہے۔ جس میں مختلف علامتوں کے اظہار سے زندگی کی تبدیلیوں اور موت کے تصورات کو اُجاگر کیا گیا ہے