کرونا وائرس: پنجاب یونیورسٹی انتظامیہ نے پرندوں کے لئے مختلف جگہ پر خوارک کے برتن رکھوا دئیے

لاہور (اتوار12 اپریل، 2020)  کرونا وائرس کی وجہ سے پنجاب یونیورسٹی اکیڈیمک بلاکس اور ہاسٹل ایریا مکمل طور پر بند ہونے کے باعث انتظامیہ نے پرندوں کو خوراک فراہم کرنے کے لئے مختلف جگہوں پر خوارک اور پانی کے برتن رکھوا دئیے۔ پنجاب یونیورسٹی ترجمان کے مطابق لاک ڈاون کی وجہ سے یونیورسٹی میں پرندوں کی خوراک کے ذرائع محدود ہو چکے تھے۔ پرندوں کو شعبہ جات کے اساتذہ اور ملازمین اپنے طور پر خوراک ڈالتے تھے اور یونیورسٹی  کی  80   سے زائد کینٹینوں میں بچا کھچا کھانا بھی پرندوں کی خوراک کا برا ذریعہ تھا  تاہم کینٹیں بھی بند ہونے کے باعث پرندوں کی خوراک کا یہ ذریعہ ختم ہو چکا تھا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر نیاز احمد نے اس معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے انتظامیہ کو ہدایات جاری کیں کہ کیمپس میں بسنے والے انسانوں کی طرح کیمپس کے پرندوں کا بھی خیال رکھا جائے اور ہر ممکن حد تک انہیں خوراک فراہم کرنے کا بندوبست کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ پرندوں اور جانوروں کا خیال رکھنا ہر انسان کی بنیادی ذمہ داریوں میں سے ایک ہے اور موجودہ بحران میں نہ صرف انسان بلکہ پرندے اور جانور بھی اپنے اپنے انداز میں کرونا وائرس سے شدید متاثر ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انسان اور حیوان آپس میں گہرا رشتہ رکھتے ہیں اور مصیبت کی اس گھڑی میں پرندوں اور دیگر جانوروں کا خیال رکھ کر اس رشتے کو مزید دوام بخشنا چاہئے۔ وائس چانسلر کی ہدایت پر انتظامیہ نے مختلف جگہوں پر خوراک کے برتن اور دانہ پانی کا بندوبست کر دیا ہے جبکہ برتنوں میں موجود پانی کو روز تبدیل کیا جائے گا تا کہ ڈینگی مچھر کا بھی سدباب رہے۔