انسانی اعضا کی پیوندکاری کرنے والے غیر رجسٹرڈ ڈاکٹروں اور ہسپتالوں کے خلاف مزیدسختی کرنے کا فیصلہ

لاہور(۱۵فروری): محکمہ صحت پنجاب نے انسانی اعضا کی پیوندکاری کرنے والے غیر رجسٹرڈ ڈاکٹروں اور ہسپتالوں کے خلاف زیادہ سختی کرنے کا فیصلہ کیا ہے . اس امرکا فیصلہ خصوصی انسانی صحت اور میڈیکل ایجوکیشن میں پنجاب انسانی اعضاکی ٹرانسپلانٹیشن اتھارٹی کے 20ویں اجلاس میں کیا گیا. اجلاس کی سربراہی صوبائی وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشدنے کی. ڈی جی پنجاب انسانی اعضا ٹرانسپلانٹیشن اتھارٹی پروفیسر ڈاکٹر فیصل مسعود نے اتھارٹی کی کارکردگی کے بارے میں بریفنگ دی.

میٹنگ نے پنجاب انسانی حقوق کے ٹرانسپلانٹیشن اتھارٹی کے ترقیاتی منصوبوں کے بجٹ کے رسمی منظوری بھی دی. اجلاس میں ڈاکٹروں نے انسانی اعضاء کے ٹرانسپلانٹیشن اتھارٹی کے قیام کے علاوہ انسانی اداروں کی نقل و حمل کے بارے میں ڈاکٹروں کی گھریلو تربیت کی منظوری بھی دی. وزیر نے کہا کہ غیر قانونی فروخت اور انسانی اعضا کی خریداری کے قانون کومزید سخت کرنے کے لئے مسودہ قانون سازی کے لئے لا ڈیپارٹمنٹ کو بھیجا جائے گا . انہوں نے کہا کہ عطائی ڈاکٹروں کے خلاف بھی کارروائی کی جانی چاہیئے. اس موقع پر صوبائی خصوصی سیکرٹری ہیلتھ کیریئر اور میڈیکل ایجوکیشن پنجاب ثاقب ظفر اور دیگر افسران موجود تھے.